ام المومنین عائشہ رضی اللہ عنہا

مکمل کتاب لٹریچر/ کتب ابو شہریار میں ملاحظہ کریں

فہرست

ام المومنین کا نکاح 7
اسماء بنت ابی بکر کی عمر کا ذکر 10
ابن الدغنہ کے واقعہ کی چشم دید گواہ 11
طلحہ رضی اللہ عنہ شادی کے متمنی ؟ 13
ام المومنین کا نکاح پہلے ہوا تھا ؟ 15
ام المومنین کا بلوغت پر قول 16
جنگ بدر کے واقعہ سے دلیل 19
حدیث اسامہ سے دلیل 20
احادیث میں ہشام بن عروہ کا تفرد ہے ؟ 21
غیر موجودگی والی روایات 24
واقعہ افک 26
تمنا عمادی کے اعتراضات 31
اہل تشیع کا موقف 36
واقعہ افک پر خوارج کی آراء 38
حمنہ بنت جحش کا کردار 39
ام المومنین کی عظمت و برکت 44
ازواج النبی سے سے تعلقات 49
نبی کا شہد حرام کرنا 51
وفات النبی اور عائشہ رضی اللہ عنہا 65
قرآن کے ساتھ حادثہ 68
حجرہ میں تین چاند گرنے والا خواب 78
وفات النبی کی وجہ زہر ؟ 83
وفات ابو بکر رضی اللہ عنہ 85
مقتل عثمان اور جنگ جمل 87
لن يفلح قوم ولواأمرهم إمرأة 103
حواب کے کتے بھونکیں گے 107
پہلی روایت 108
دوسری روایت 114
تیسری روایت 116
چوتھی روایت 119
پانچویں روایت 120
پانچویں صدی سے قبل اس روایت کی کوئی حیثیت نہیں تھی 123
حواب بنی عامر کا تالاب نہیں تھا 125
لشکر عائشہ بصرہ پہنچنے پر 128
لشکر علی کی ساخت 129
قصاص کا مطالبہ 143
المصنف ابن ابی شیبه کی روایات 145
عائشہ (رض) کی سواری کو قتل کر دیا گیا 169
حالت افسوس کے فرضی قصے 174
امیر المومنین کو قتل کی دھمکی 177
وفات ام المومنین 179
اہل شام کا ام المومنین پر تنقید کرنا ؟ 181
اعتقادی مباحث 183
لا النبی بعدی کا مطلب 183
معراج ایک خواب تھا ؟ 186
میت پر اس کے اہل کا رونا 188
قلیب بدر پر موقف 199
کیا اللہ جانتا ہے جو لوگ چھپاتے ہیں ؟ 201
سماع الموتی پر موقف 215
عذاب قبر کی روایات 221
وفات شدہ لوگوں سے پردہ کرنا 230
معراج پر دیدار الہی کے حوالے سے موقف 245
فقہی مباحث 248
نامحرم کو دودھ پلانا 248
غلام سے پردہ نہ کرنا 257
غسل کے حوالے سے روایت 259
قول نبوی پر تبصرہ کیا ؟ 261
حالت حیض کے حوالے سے 262

امہات المومنین کی حیات مسلمان عورتوں کے لئے مشعل راہ ہے – عائشہ رضی اللہ عنہا کی سیرت اور ان کے اعتقاد و فقہ سے متعلق مباحث کو جمع کیا گیا ہے – امہات المومنین کا درجہ تمام مومنوں کے لئے ماں والا ہے بلکہ حقیقت میں ایک ماں سے بڑھ کر ہے کیونکہ ایک ماں کا شوہر باپ ہوتا ہے لیکن ام المومنین کے شوہر اس امت کے نبی ہیں –
راقم نے اس کتاب کی ضرورت محسوس کی جب دیکھا کہ اہل سنت میں سے بعض رافضی پروپیگنڈے سے متاثر ہوئے ہیں اور کھل کر ام المومنین پر تنقید کر رہے ہیں –ان کو لگتا ہے کہ جنگ جمل و صفین ابھی بھی جاری ہے جبکہ ڈیڑھ ہزار سال قبل صرف دو دن میں یہ جنگیں ختم ہو گئیں تھیں – منحوس لوگوں نے ان جنگوں سے متعلق جھوٹ گھڑا ، محدثین نے جمع کیا ، متاخرین نے سر کا تاج بنا دیا – افسوس جہلاء خود اب حواب کے کتوں کی طرح بھونک رہے ہیں –
عائشہ رضی اللہ عنہا فقہائے مدینہ کی استاد ہیں اور اعتقادی مسائل میں ان کی حکمت مومنوں کے لئے مشعل راہ ہے – آپ کی ہی عظمت ہے کہ سماع الموتی کا رد کرنے والوں کو ہمت ملی ہے – قبر پرستی کے خلاف آواز بلند ہوئی ہے
یہ ام المومنین کا ہی فیض ہے کہ مومن عورتوں کو معلوم ہوا کہ وہ جنگ میں شرکت بھی کر سکتی ہیں ورنہ اس سے قبل اسلام میں اس کی مثال نہیں تھی – یہ ان کی برکت ہے کہ پانی نہ ملے تو تیمم کیا جا سکتا ہے – یہ ان کی شان ہے کہ قرآن میں ان کو معصوم ، رجس سے پاک قرار دیا گیا ہے
ابو شہر یار
٢٠٢٠

 

Leave a Reply

Your email address will not be published.

2 × two =