اسرار احمد کی نئے مجدد کی پیشنگوئی

اسرار احمد کے مطابق چار صدیوں تک تصوف کی تبلیغی مساعی کے نیتجے میں بر صغیر، صنم خانہ ہند،  میں مجدد آ رہے ہیں

گیارہویں صدی (الف ثانی ) کا مجدد اعظم   شیخ احمد سرہندی
بارہویں صدی کا مجدد اعظم امام الہند شاہ ولی اللہ دھلوی
تیرھویں صدی کا مجدد اعظم،  ہزارہ کے سید احمد بریلوی
چودھویں صدی کا مجدد اعظم امام اسیر مالٹا شیخ الہند جیسا مجاہد

اسرار احمد کی پیشینگوئی کے مطابق اگلا مجدد پاکستان  سے ہو گا

دوسری طرف سعودی عرب کہ شیخ امام کعبہ عبد الرحمان السدیس کا فرمانا ہے کہ آج کے مجدد دین و ملہم امام محمد بن سلمان ہیں جو موجودہ ولی العھد ہیں

سن ٢٠١٨  میں إمام وخطيب الحرم المكي عبد الرحمن السديس نے موجود سعودی ولي العهد الأمير محمد بن سلمان کو مُحدَّث اور   ملهم (جس کو الہام   ہو ) قرار دیا ہے  اور اپنی اس رائے کا ذکر خطبہ میں کیا

اس  کا ذکر مشھور  عرب اخبارات میں ہوا لنک 

 کوئی بر صغیری  صوفي مجدد کا منتظر ہے تو کوئی واپس عربی و تمیمی سلفي  مجدد کو کہہ رہا ہے کہ آ چکا ہے

  عثمانی صاحب کو چھوڑ  کر  اسرار  احمد  الگ  ہو  گئے تھے کہ  عثمانی صاحب  سرے سے تصوف   کے قائل ہی  نہیں  تھے

راقم بھی پیشنگوئی اپنے اندازہ  پر کرتا ہے کہ عنقریب  صوفی حلقوں  میں بھی  پھوٹ  پڑنے  والی ہے – سنٹرل  ایشیا  کے صوفے  فرقے اپس میں مل جائیں  گے  اور برصغیر و انڈیا و ترکی  کے صوفے  حلقے شکل دیکھتے رہ جائیں  گے – ان صوفیوں  کے  امام المہدی  الدیلم  سے  نکلیں  گے یعنی ازربائیجان سے   جیسا کہ خود  صوفی  بیان  کرتے چلے آ رہے ہیں

جو ان صوفیاء  نے بویا  ہے  وہ  کاٹنا بھی انہی صوفیاء کو ہو  گا

 

ہر صدی میں مجدد آئے گا ؟

Leave a Reply

Your email address will not be published.

3 × two =